Skip to main content

نظام کی راہ میں رکاوٹیں دور کریں گے Date: 2020-03-24 نظام کی راہ میں رکاوٹیں دور کریں گے آج کی بات اگرچہ کابل فوج کے خلاف جاری کارروائیاں اور حملے ایک عام جہادی عمل ہے۔ یہ امارت اسلامیہ کے وعدوں کے منافی نہیں ہے۔ البتہ دشمن اس عمل کو مجاہدین کے خلاف پروپیگنڈے کے طور پر استعمال کر رہا ہے۔ کابل انتظامیہ کے بانیوں اور امداد دہندگان نے افغانستان پر ناجائز قبضے کے خاتمے کے لیے امارت اسلامیہ کے ساتھ تاریخی معاہدہ کیا ہے۔ امارت اسلامیہ کی معزز قیادت نے کابل انتظامیہ کے تمام عہدے داروں کے لیے عام معافی کا اعلان کیا ہے۔ اُن سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ دنیا و آخرت کے لیے نقصان دِہ غیرضروری مخالفت سے گریز کریں۔ جب ایک طرف اُن کے آقا امریکا نے حمایت کا ہاتھ کھینچ لیا اور دوسری طرف عوام کی جانب سے ان کے لیے دروازے کھلے تھے، وہ کابل فوج کے لیے بہترین آپشن تھا کہ وہ اپنے عوام کو قتل کرنے کے بجائے ہتھیار ڈال دے۔ اس کے لیے بہتر ہوگا کہ وہ غیروں کے لاحاصل ہدف کے لیے اپنی زندگیاں خطرے میں ڈالنے کے بجائے اپنے عوام کے ساتھ بیٹھ جائے۔ وہ ناکام اور بُرا راستہ ترک کر دے۔ وہ 19 برس سے اس راستے پر چلتے ہوئے اپنی قوم اور اپنے نہتے مسلمان بھائیوں کے خلاف برسرِ پیکار ہے۔ امارت اسلامیہ ایک بار پھر ان تمام ورغلائے گئے افغانوں سے اپیل کرتی ہے کہ ہوش کے ناخن لیں۔ وہ دشمن اور ان رہنماؤں کے لیے لڑنے سے گریز کریں، جو خود اپنے محفوظ محلات میں بیٹھے ہیں اور انہیں موت کی منہ میں دھکیل رہے ہیں۔ امارت اسلامیہ کے دروازے ان کے لیے ہمیشہ کھلے رہیں گے۔ وہ انہیں معاف کر دے گی۔ مجاہدین ​اللہ تعالٰی کی مدد سے کسی کو اجازت نہیں دیں گے کہ کوئی بھی جارحیت کے خاتمے اور اسلامی نظام کے نفاذ کے اعلی مقاصد کے حصول کی راہ میں رکاوٹ بنے۔

Item Preview

This item is only available to logged in Internet Archive users

Log in
Create an Internet Archive account

SIMILAR ITEMS (based on metadata)